Welcome to Great Pakistan - وطن کی مٹی عظیم ہے توعظیم تر ہم بنا رہے ھیں

Register now to gain access to all of our features. Once registered and logged in, you will be able to contribute to this site by submitting your own content or replying to existing content. You'll be able to customize your profile, receive reputation points as a reward for submitting content, while also communicating with other members via your own private inbox, plus much more!

This message will be removed once you have signed in.

  • Announcements

Search the Community: Showing results for tags 'اردو غزل'.



More search options

  • Search By Tags

    Type tags separated by commas.
  • Search By Author

Content Type


Forums

  • Great Pakistan - عظیم پاکستان
    • Pakistan - پاکستان
    • رمضان کریم
    • Greeting Messages - تہنیتی پیغامات
  • اردو محفل
    • بزم سخن
    • جہان نثر
    • طنز و مزاح
  • Life Style
    • Food & Cooking
    • Health & Fitness
    • Science & Technology
    • Sports & Recreational Activities
    • Travel & Sightseeing
    • Home Decoration & Gardening

Calendars

  • Community Calendar

Group


AIM


ICQ


Yahoo! Messenger


Skype


Facebook


Twitter


Education Level


Mobile No


Professional Qualifications

Found 4 results

  1. تری قربت کی نشانی ہے مرا عید کا چاند مری اپنی ہی کہانی ہے مرا عید کا چاند پھر لبِ بام وہ چمکا ہے محبت لے کر میری تو شام سہانی ہے مرا عید کا چاند اک ملاقات کے وعدے سے گریزاں رہنا یہ مرا حسن ، جوانی ہے مرا عید کا چاند ہم تجھے پیار، محبت بھی نہیں کر سکتے اور تجھے یاد دہانی ہے عید کا چاند گر نئے موڑ پہ ملنے سے ہیں قاصر ہم تم پھر کوئی راہ پرانی ہے مرا عید کا چاند جس سے گزرے نہ تری یاد کا جھونکا وشمہ زندگی رات کی رانی ہے مرا عید کا چاند
  2. کیا جانے کس خمار میں کس جوش میں گرا وہ پھل شجر سے جو مری آغوش میں گرا کچھ دائرے سے بن گئے سطح خیال پر جب کوئی پھول ساغر مے نوش میں گرا باقی رہی نہ پھر وہ سنہری لکیر بھی تارا جو ٹوٹ کر شب خاموش میں گرا اڑتا رہا تو چاند سے یارا نہ تھا مرا گھائل ہوا تو وادی گل پوش میں گرا بے آبرو نہ تھی کوئی لغزش مری قتیلؔ میں جب گرا جہاں بھی گرا ہوش میں گرا
  3. نہ ہو بلا سے خریدار ، آو سچ بولیں یہی ہے موقع اظہار ، آو سچ بولیں بنامِ عظمت کردار ، آو سچ بولیں پکار کر سرِ دربار ، آو سچ بولیں کہیں گے کیا رسن و دار ، آو سچ بولیں اگر ضمیر ہے بیدار ، آو سچ بولیں نظر ہے آئینہ بردار ، آو سچ بولیں کدھر گئے وہ گنہ گار، آو سچ بولیں